سبق آموز کہانی🖋 اک خادمہ کے ایمان کی پختگی

سبق آموز کہانی اردو


★حضرت ابن عباس رضی اللّٰه عنهُ سے مروی ہے کہ نبی ﷺ نے ارشاد فرمایا جس رات مجھے معراج ہوئی، مجھے دوران سفر ایک جگہ سے بڑی بہترین خوشبو آئی، میں نے پوچھا جبریل ! یہ کیسی خوشبو ہے ؟ انہوں نے بتایا کہ یہ فرعون کی بیٹی کی کنگھی کرنے والی خادمہ اور اس کی اولاد کی خوشبو ہے، میں نے پوچھا کہ اس کا قصہ تو بتائیے ؟ انہوں نے کہا کہ ایک دن یہ خادمہ فرعون کی بیٹی کو کنگھی کررہی تھی، اچانک اس کے ہاتھ سے کنگھی گر گئی، اس نے بسم اللّٰه کہہ کر اسے اٹھا لیا، فرعون کی بیٹی کہنے لگی کہ اس سے مراد میرے والد صاحب ہیں ؟ اس نے کہا نہیں، بلکہ میرا اور تیرا رب اللّٰه ہے، فرعون کی بیٹی نے کہا کہ میں اپنے والد کو یہ بات بتادوں گی ؟ اس نے کہا کہ ضرور بتاؤ، فرعون کی بیٹی نے باپ تک یہ خبر پہنچائی، اس نے خادمہ کو طلب کر لیا۔ جب وہ خادمہ آئی تو فرعون کہنے لگا اے فلانہ ! کیا میرے علاوہ بھی تیرا کوئی رب ہے ؟ اس نے کہا ہاں ! میرا اور تمہارا رب اللّٰه ہے، یہ سن کر فرعون نے تانبے کی ایک دیگ بنانے کا حکم دیا اور اسے آگ سے خوب دہکا یا، اس کے بعد حکم دیا کہ اسے اور اس کی اولاد کو اس میں پھینک دیا جائے، خادمہ نے کہا کہ مجھے آپ سے ایک کام ہے، فرعون نے پوچھا کہ کیا کام ہے ؟ اس نے کہا میری خواہش ہے کہ جب ہم جل کر کوئلہ ہوجائیں تو میری اور میرے بچوں کی ہڈیاں ایک کپڑے میں جمع کرکے دفن کر دینا، فرعون نے کہا کہ یہ تمہارا ہم پر حق ہے، (ہم ایساہی کریں گے) اس کے بعد فرعون نے پہلے اس کے بچوں کو اس میں جھونکنے کا حکم دیا، چناچہ اس کی آنکھوں کے سامنے اس کے بچوں کو ایک ایک کرکے اس دہکتے ہوئے تنور میں ڈالا جانے لگا، یہاں تک کہ جب اس کے شیر خوار بچے کی باری آئی تو وہ اس کی وجہ سے ذرا ہچکچائی، یہ دیکھ کر اللّٰه کی قدرت اور معجزے سے وہ شیر خوار بچہ بولا اماں جان ! بےخطر اس میں کود جائیے کیونکہ دنیا کی سزا آخرت کے عذاب سے ہلکی ہے، چناچہ اس نے اس میں چھلانگ لگادی۔

حضرت ابن عباس رضی اللّٰه عنهُ نے فرمایا ہے کہ چاربچوں نے بچپن (شیرخوارگی) میں کلام کیا:-

1- حضرت عیسیٰ (علیہ السلام) نے،

2-جریج کے واقعے والے بچے نے،

3-حضرت یوسف علیہ السلام کے گواہ نے 

 اور 

4-فرعون کی بیٹی کی کنگھی کرنے والی خادمہ کے بیٹے نے۔

(مسند امام احمد" جلد 2 - باب:  عبداللّٰه بن عباس کی مرویات حدیث نمبر: 942)

اللّٰه تعالیٰ ہمیں بھی ایسا مضبوط ایمان عطا کرے کہ اسلام کی خاطر جان دیتے ہوئے بھی ایمان کمزور نہ ہونے پائے بلکہ اور پختگی آئے۔۔۔ آمین یا رب العالمین

سبق آموز کہانی🖋

Post a Comment